ٹیچر تقرری معاملہ:اگر انصاف نہیں ملا تواحتجاج سے دیں گے جواب: پرینکاگاندھی

priyanka-gandhi

نئی دہلی (آئی این ایس انڈیا) :اترپردیش حکومت نے 69000 اساتذہ کی تقرری پر پابندی والے سنگل بنچ کے حکم کو چیلنج کرنے کے لئے خصوصی درخواست دائر کی ہے۔ اسی درمیان کانگریس کی قومی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی نے یوگی حکومت کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ اساتذہ کی تقرری گھوٹالہ کو اتر پردیش میں ویاپم گھوٹالہ قرار دیا گیا ہے۔ انہوں نے اس معاملے میں ٹویٹ کیا کہ اگر حکومت نوجوانوں کو انصاف دلانے میں ناکام رہی تو پھر احتجاج کیا جائے گا۔پرینکا گاندھی نے پیر کو اپنے ٹویٹ میں لکھا 69000 اساتذہ کی تقرری گھوٹالہ یوپی کا ویاپام گھوٹالہ ہے۔ ڈائریوں میں طلباء کے نام، پیسے کا لین دین، امتحان مراکز میں بڑی ہیرا پھیری، ان گڑبڑیوں میں ریکیٹ کا شامل ہونا یہ سب ظاہر کرتا ہے کہ اس کے تارکئی جگہوں سے منسلک ہیں۔ انہوں نے مزید لکھا کہ محنتی نوجوانوں کے ساتھ ناانصافی نہیں ہونی چاہئے۔ اگر حکومت انصاف نہیں دے سکی تو اس کا جواب احتجاج سے دیا جائے گا۔ اتر پردیش حکومت نے ریاست میں 69000 اسسٹنٹ اساتذہ کی تقرریوں پر پابندی عائد کرنے کے سنگل بنچ کے فیصلے کو چیلنج کیا ہے۔ یہ خصوصی اپیل 9 جون کو سماعت کے لیے درج کی گئی ہے۔ اس کی سماعت جسٹس پنکج جیسوال اور جسٹس دنیش کمار سنگھ کی ڈویژنل بنچ کریں گی۔ یہ درخواست ریاستی امتحانات ریگولیٹری اتھارٹی کی جانب سے دائر کی گئی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *