ایم آئی ایم اراکین اسمبلی کابہاراسمبلی کے باہرمظاہرہ

protest-in-bihar-assembly

پٹنہ/ارریہ:بہاراسمبلی کا بجٹ اجلاس جاری ہے۔ بہار کے نائب وزیر اعلیٰ اور وزیر خزانہ تار کشور پرساد نے مالی سال 2021-22 کے لئے 2 لاکھ 18 ہزار 303 کروڑ روپئے کا بجٹ پیش کیا ہے۔بہاراسمبلی بجٹ کے دوران تمام پارٹیاں اوراراکین اسمبلی اپنے اپنے مطالبات کو اسمبلی کے اندراورباہر زوروشور اٹھارہے ہیں۔ اسی ضمن میں مجلس اتحادالمسلمین کے اراکین اسمبلی نے اسمبلی کے اندروباہرسیمانچل میں درپیش مسائل کے ازالہ کے لئے آواز اٹھائی ہے۔

بہارمجلس اتحادالمسلمین کے صدر وامورسے رکن اسمبلی اخترالایمان، بائسی سے رکن اسمبلی سیدرکن الدین، کوچادھامن سے رکن اسمبلی محمد اظہار آصفی،جوکی ہاٹ سے رکن اسمبلی شاہنواز عالم، بہادرگنج سے رکن اسمبلی انظرنعیم نے مشترکہ طورپر پورنیہ کوبہارکی دوسری راجدھانی دیئے جانے کی مانگ کولیکر اسمبلی کے اندروباہرمظاہرہ کیا۔اسمبلی کے باہر پانچوں اراکین اسمبلی نے بینروپوسٹر لیکر پورنیہ میں ایئرپورٹ، سیمانچل میں سینٹرل یونیورسٹی اورہائی کورٹ کے اسپیشل برانچ کیلئے آوازبلندکی۔

آپ کوبتادیں کہ بہار اسمبلی کا بجٹ اجلاس کاآغاز19فروری زوردارہنگامے کے ساتھ ہواتھا۔اس دن سبھی اپوزیشن پارٹیوں نے عوامی مسائل کولیکر اسمبلی کے باہرزورداراحتجاجی مظاہرہ بھی کیاتھا۔بجٹ اجلاس کے پہلے دن بھی مجلس اتحادالمسلمین کے پانچوں اراکین اسمبلی کافی غصے میں نظرآئے تھے۔سبھی اراکین اسمبلی اپنے ہاتھوں میں بیٹر-پوسٹرلیکر ودھان سبھا احاطے میں سیمانچل میں سیلاب متاثرین کوانصاف دلانے کا مطالبہ کیاتھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *