کوروناکاقہر:دہلی میں پابندیاں سخت

عوامی تقریبات پرپابندی،میٹرو اور بسیں نصف گنجائش کے ساتھ چلیں گی،بازار دس بجے رات تک کھلے رہیں گے
نئی دہلی(آئی این ایس انڈیا)دارالحکومت میں کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسزکے درمیان دہلی میں سخت پابندیاں عائد کردی گئی ہیں۔ دہلی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (ڈی ڈی ایم اے) کی جاری کردہ ہدایات کے مطابق، اب دہلی میٹرو اور ڈی ٹی سی کی بسیں 50 فیصد صلاحیت سے چلیں گی۔ تمام عوامی پروگرام پرپابندی عائد کردی گئی ہے۔شادی اور جنازے میں شامل افراد کی تعداد بھی طے کی گئی ہے۔جب کہ بازاروں میں دن میں شام تک اسی طرح ہجوم ہے۔اسی کے ساتھ ساتھ نویں سے بارہویں تک کے بچوں کو ضروری تعلیمی کام کے لیے اسکول بلانے کے علاوہ، تمام تعلیمی ادارے بھی بند رہیں گے۔ رات کا کرفیو صبح 10 بجے سے صبح 5 بجے تک جاری رہے گا۔ڈی ڈی ایم اے کے جاری کردہ حکم میں کہا گیا ہے کہ 30 اپریل تک تمام پابندیاں نافذ رہیں گی۔ تاہم کورونا کی چوتھی لہر کے دوران دہلی حکومت نے لاک ڈاؤن لگانے جیسے سخت اقدامات نہیں کیے ہیں۔ وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے بھی ہفتے کی صبح کہا تھا کہ ان کی حکومت کورونا سے زیادہ موثر طریقے سے نمٹنے کے لیے لاک ڈاؤن کی جگہ پر ضروری پابندیاں عائد کرنے پر غور کرتی ہے۔ضلعی اور پولیس انتظامیہ کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ فوری طور پر ان احکامات کو سختی سے نافذ کریں۔ اگر کوئی شخص ان قوانین کو توڑتا ہے تو، قانون کے ذریعہ ایف آئی آر درج کی جائے گی۔ڈی ڈی ایم اے کی ہدایت کے مطابق، دہلی میٹرو میں ہر کوچ میں مسافروں کی گنجائش کا 50 فیصد سفر کرسکیں گے۔ اسی طرح انٹراسٹیٹ بسیں، ڈی ٹی سی بسیں، کلسٹر بسیں بھی 50 فیصد سے زیادہ لوگوں کوبیٹھنے نہیں دیں گی۔ اس کے علاوہ تمام سرحدیں کھلی رہیں گی۔ فلمیں، تھیٹر، ملٹی پلیکس بھی 50 فیصد کی صلاحیت سے چلیں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.