دہلی ہائی کورٹ نے گوگل کو یوٹیوب سے فلم ’صاحب بیوی اور گینگسٹر‘ ہٹانے کو کہا

delhi-high-court

نئی دہلی(آئی این ایس انڈیا) دہلی ہائی کورٹ نے گوگل ایل ایل سی کو یوٹیوب سے ہندی فلم ’صاحب بیوی اور گینگسٹر ہٹانے کوکہاہے، جسے فلم کے شریک پروڈیوسروں کے مطابق سوشل میڈیا پلیٹ فارم پر غیر قانونی طور پر اپ لوڈ کیا گیا ہے۔ جسٹس راجیو شکادھر نے منگل کو ایک عبوری حکم میں یوٹیوب کو ہدایت دی کہ وہ فلم کو 48 گھنٹوں کے اندر ہٹائیں، لیکن ان کے وکیل نے کہا کہ اس پلیٹ فارم کو امریکی کمپنی گوگل ایل ایل سی نے کنٹرول کرتی ہے، جو اس ہدایت کی پیروی کرے گی۔ ہائی کورٹ نے یوٹیوب کی جانب سے وکیل کے پیش ہونے والے بیان کو ریکارڈ کیا اور کیس کو مزید سماعت کے لئے 9 جولائی کو درج کیا۔ یہ حکم فلم کے شریک پروڈیوسر راہول میترا کے دائر کردہ مقدمے پر آیا ہے، جس میں دعوی کیا گیاہے کہ فلم کے دوسرے پروڈیوسر، ٹگمنشو دھولیا نے انہیں فلم کے تمام حقوق دے دیئے ہیں۔ مترا نے اپنی درخواست میں کہا ہے کہ یوٹیوب پر اپنی فلم اپ لوڈ کرنے سے ان کے حقوق پامال ہوئے ہیں۔ انہوں نے دعوی کیا کہ وہ ایک بہت بڑا مالی نقصان اٹھا رہے ہیں کیونکہ وہ ایمیزون پرائم ویڈیو اور نیٹ فلکس جیسے ویڈیو اسٹریمنگ پلیٹ فارم پر فلم کے حقوق فروخت کرنے کی پوزیشن میں نہیں ہیں۔ ہائی کورٹ نے یوٹیوب اور گوگل ایل ایل سی کو نوٹس جاری کرتے ہوئے کیس میں اپنا جواب داخل کرنے کو کہا ہے۔ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے عدالتی کارروائی کے دوران، یوٹیوب کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ یہ پلیٹ فارم صرف ایک ذریعہ ہے لہذا اس پلیٹ فارم پر فلم اپ لوڈ ہونے کا ذمہ داروہ نہیں ہوسکتا۔ یوٹیوب نے بتایا کہ پراسیکیوٹر کو اس شخص یا تنظیم کے خلاف مقدمہ کرنا چاہئے جس نے غیر قانونی طور پر فلم اپ لوڈ کی تھی۔ اس کے بعد ہائی کورٹ نے درخواست گزار کو ہدایت دی کہ فلم اپ لوڈ کرنے والے کو پانچ دن میں کیس میں ملزم بنایا جائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *